Human Helping Center
سچا دین
یہ مضمون انگریزی زبان میں بھی موجود ہے۔

اصلی انسان روح ہے، جسم نہیں

تحریر: مولانا ابرار عالم (April 24, 2019)

ہر انسان ایک جسم اور روح پر مشتمل ہے۔

اصلی انسان جسم نہیں بلکہ روح ہے کیونکہ جسم روح کے لیے ایک لباس کی طرح ہے۔

جیسا کہ ہر انسان اپنے لباس کو کچھ مدت کے لیے ہی استعمال کرتا ہے اور جب لباس استعمال کے قابل نہیں رہتا تو اسے پھینک دیتا ہے۔

اسی طرح جب انسانی جسم استعمال کے قابل نہیں رہتا تو روح اپنے مالک یعنی خالق کائنات خدا کے حکم پر اسے چھوڑ دیتی ہے۔

اور ایسا کیوں نہ ہو جبکہ روح ہی اصلی انسان ہے۔

لہذا جب یہ جسم کو چھوڑ دیتی ہے اور جسم لاش بن جاتا ہے تو اس کی معاشرے میں کوئ اہمیت نہیں رہتی اور لوگ اس مردہ انسان سے معاملات نہیں کرتے۔

یہ ثابت ہوا کہ ہر انسان کی سب سے اہم چیز اس کی روح ہے، نہ کہ جسم۔

جسم چونکہ مٹی سے بنا ہے اس لیے اسے طاقت اور توانائ کھانے پینے سے حاصل ہوتی ہے۔

روح چونکہ خالق کائنات کے نور سے بنی ہے اس لیے اسے طاقت اور توانائ خدا پر یقین کرنے اور اس کا حکم ماننے سے حاصل ہوتی ہے۔

لہذا وہ لوگ جو اللہ پر یقین رکھتے ہیں، اس کے احکامات کو مانتے ہیں اور اس کی بندگی کرتے ہیں ان کی روح کو ذندگی میں اور موت کے بعد بھی طاقت حاصل رہتی ہے۔

لیکن جو لوگ اللہ پر یقین نہیں کرتے ان کی روح میں موت کے بعد طاقت نہیں ہوتی۔

دنیا بھر میں مردہ مسلمانوں کی روح کے کمالات پر ثبوت تو مل رہے ہیں لیکن مردہ غیر مسلموں کی روح کے کمالات پر کوئ ثبوت اس لئے نہیں مل رہا ہے کہ ان لوگوں نے اللہ کو ایک سچا خدا نہیں مانا اور نہ ہی اس کی عبادت آخری نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے طریقے کے مطابق کی کیوں کہ دین اسلام صرف ان کے ذریعے ہی مکمل ہوا۔

تو پھر کون ان غیرمسلموں کی روحوں کو طاقت دیتا؟

اسی لئے مرنے کے بعد ان کی روح کے کردار کا کوئی ثبوت نہیں مل سکتا۔

یہی وجہ ہے کہ کسی بھی کافر کی قبر سے فیض جاری نہیں ہو رہا اور اسی وجہ سے غیر مسلم بھی غیر مسلموں کی قبروں پر فیوض و برکات اور سکون پانے رات و دن نہیں ٹھہرتے جبکہ اللہ کے ماننے والے شہیدوں اور صوفیوں کی قبروں پر مسلم تو کجا غیر مسلم بھی ٹھہرتے ہیں۔


اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں:

Shah Yaqeeq Baba