سچا دین
یہ مضمون انگریزی زبان میں بھی موجود ہے۔

دنیا کے تمام غیر مسلموں کو محفوظ لاش کا چیلنج

تحریر: مولانا ابرار عالم (July 22, 2012)

اللہ کے فضل و کرم سے میں دنیا کے تمام مذہبی پیشواؤں اور پیروکاروں کو یہ چیلنج کرتا ہوں کہ وہ حضرت محمدﷺ کے زمانے سے لے کر اب تک (اور قیامت تک) بغیر کیمیکل استعمال کئے تازہ حالت میں تازہ خون سمیت کسی ایک غیرمسلم کی لاش بھی نہیں دکھاسکتے۔ اسکے علاوہ ایسے تمام غیر مسلم فوجی جو مسلمان فوج سے لڑائی اورجنگ کرتے ہوئے مارے گئے ان کی لاشیں بھی تازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ نہیں ہیں کیونکہ خالق کائنات یعنی اللہ تمام غیر مسلموں سے منسوخ اور باطل مذہب کی پیروی کرنے پر ناراض ہے۔

میں تمام غیرمسلموں سے وعدہ کرتا ہوں کہ اگر وہ بغیر کیمیکل استعمال ہوئے کسی ایک غیر مسلم کی بھی لاش مجھے تازہ حالت میں تازہ خون سمیت دکھانے میں کامیاب ہوگئے تو میں بھی غیر مسلم ہوجاؤں گا اورانکے مذہب کو قبول کرلوں گا۔

یہ میرا ہمیشہ کیلئے ایک کھلا چیلنج ہے اور کوئی بھی غیر مسلم ایسا کبھی نہیں کرسکے گاکیونکہ قرآن میں خالق کائنات یعنی اللہ نے سورۂ آل عمران، سورہ نمبر3، آیت نمبر 85میں فرمایا ہے کہ’ اورجو کوئی اسلا م کے سوا کسی اور دین کو چاہے گاتو وہ اس سے ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا، اور وہ آخرت میں نقصان اٹھانے والوں میں سے ہوگا‘۔ لہذا یہ ایک حقیقت ہے کہ حضرت محمدﷺکے زمانے سے تمام دیگر ادیان و مذاہب منسوخ و باطل ہوگئے ہیں۔ اسی وجہ سے اللہ دنیا کے تمام غیر مسلموں سے ناراض ہے اور ان سب کیلئے مرنے کے بعدسخت عذاب ہے جیسا کہ قرآن کریم میں سورۂ ابقرہ، سورہ نمبر2، آیت نمبر161-162میں ہے کہ’بیشک جنہوں نے کفر کیااور اس حال میں مرے کہ وہ کافر ہی تھے ان پر اللہ کی اور فرشتوں کی اورسب لوگوں کی لعنت ہے۔وہ ہمیشہ اسی میں رہیں گے، ان پر سے عذاب ہلکا نہیں کیا جائے گااور نہ ہی انہیں مہلت دی جائے گی‘۔
اسی لئے میں نے چیلنج دیا ہے کہ کسی بھی غیر مسلم کی لاش بغیر کیمیکل استعمال کئے تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ نہیں ملے گی کیونکہ مرنے کے فوراً بعد عذاب شروع ہوجاتا ہے یہی وجہ ہے کہ لاش گل سٹر کر ختم ہوجاتی ہے۔ اس لئے عذاب کی حالت میں یہ کیسے ممکن ہے کہ انکی لاشیں تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ رہ جائیں؟ لازمی بات ہے کہ ایسا کبھی بھی نہیں ہوسکتا۔

لیکن میں غیرمسلموں کولاکھوں انبیاء کرام، صحابہ کرام، شہدائے اسلام ،سچے مومن و مومنات اور ایسے فوجی جو
غیر مسلموں سے اللہ کی راہ میں لڑتے ہوئے قتل ہوئے کی نعشیں بغیر کیمیکل استعمال ہوئے تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت دکھا سکتا ہوں کیونکہ صرف اسلام ہی خالق کائنا ت کے نزدیک قابل قبول مذہب ہے جیسا کہ سورۂ آل عمران،سورہ نمبر3،آیت نمبر19میں ہے کہ’بیشک دین اللہ کے نزدیک اسلام ہی ہے‘ اور سورۂ المائدہ ،سورہ نمبر5، آیت نمبر3میں ہے کہ’آج میں نے تمہار ے لئے تمہارا دین مکمل کردیااور تم پر اپنی نعمت پوری کردی اور تمہارے لئے اسلام کو دین پسند کرلیا ‘۔

اس لئے میں یہ چیلنج کرتا ہوں کہ اسلام کے سچے پیروکاروں کی نعشیں ہمیشہ تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ رہیں گی کیونکہ وہ سچے مذہب کے پیروکار ہیں جو حضرت محمدﷺ کے ذریعے مکمل کردیا گیا۔نیز حضرت محمدﷺکے زمانے سے لے کر اب تک(اور قیامت تک)جتنے بھی مسلمان فوجی اللہ کی راہ میں غیر مسلموں سے لڑتے ہوئے قتل ہوئے انکی نعشیں بھی تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ رہیں گی کیونکہ اللہ ان سب سے خوش اور راضی ہے کہ انھوں نے اللہ کی خاطر اپنی جانیں قربان کردیں جیسا کہ سورۂ البقرہ،سورہ نمبر2،آیت نمبر154میں ہے کہ’اور جو لوگ اللہ کی راہ میں مارے جائیں انہیں مت کہا کرو کہ یہ مردہ ہیں بلکہ زندہ ہیں لیکن تمہیں شعور نہیں‘ اور سورۂ آل عمران ،سورہ نمبر3، آیت نمبر169میں ہے کہ ’اور جو لوگ اللہ کی راہ میں قتل کئے جائیں انہیں ہرگز مردہ خیال نہ کرنا،بلکہ وہ اپنے رب کے حضور زندہ ہیں انہیں رزق دیا جاتا ہے‘۔ 

لہذا ،یہ اللہ کے اپنے الفاظ میں کہی گئی ایک سوفیصد سچی بات ہے اسی لئے میں نے یہ چیلنج دیا ہے کہ میں لاکھوں کی تعداد میں شہدائے اسلام کی نعشیں دکھا سکتا ہوں جو صدیوں سے بغیر کیمیکل استعمال ہوئے تروتازہ حالت میں تازہ خون سمیت محفوظ ہیں کیونکہ وہ زندہ ہیں، انھیں اللہ کی طرف سے رزق بھی دیا جاتا ہے مگر ہمیں اس حقیقت کا شعور نہیں ہے۔

اگر کوئی غیر مسلم اس بات کا وعدہ کرے گا کہ وہ اسلام میں داخل ہوجائے گاتو میں اسے تروتازہ حالت میں محفوظ نعشیں دکھاؤں گا جیسا کہ میں نے چیلنج دیا ہے۔ یہ بہت ممکن ہے کہ غیر مسلم میری اس تحقیق اور باتوں پر یقین نہیں کریں گے مگریہ ایک حقیقت ہے اور غیر مسلموں کے لئے اسی دنیا میں اللہ کی طرف سے سچے مذہب کی ایک کھلی اور آنکھوں سے دیکھے جانے والی نشانی ہے تاکہ وہ دین اسلام کی سچائی کو تسلیم کرلیں اور اس میں داخل ہوجائیں جیسا کہ سورۂ حم السجدہ ،سورہ نمبر41،آیت نمبر53میں ہے کہ’ہم عنقریب انہیں اپنی نشانیاں اطرافِ عالم میں اور خود ان کی ذاتوں میں دکھادیں گے یہاں تک کہ ان پر ظاہر ہوجائے گاکہ وہی حق ہے۔ کیا آپ کا رب کافی نہیں ہے کہ وہی ہر چیز پر گواہ ہے؟‘۔


مجھے یقین ہے کہ غیر مسلم کھلے دل و دماغ سے سوچیں گے اور میرے چیلنج کو قبول کریں گے۔


اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں:

تلاش کریں

Natural, Neutral and Irrefutable Proofs on Truth of Islam
کتاب ڈاون لوڈ کریں

Shah Yaqeeq Baba